پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے پر عملدرآمد روکا جائے،درخواست میں استدعا لاہور(آن لائن)لاہور ہائیکورٹ میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھانے کا اقدام چیلنج کر دیاگیا،درخواست جوڈیشل ایکٹیوزم پینل کی جانب سے ایڈووکیٹ اظہر صدیق نے دائر کی ہے۔درخواست گزار نے لاہور ہائیکورٹ سے استدعا کی ہے کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے پر عملدرآمد روکا جائے۔درخواست میںموقف اپنایا گیا کہ بین الاقوامی دنیا میں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں کم ہوئی ہیں مگر پاکستان میں بڑھ گئی ہیں۔عید الفطر سے پہلے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ مہنگائی کا طوفان لے کر آئے گا۔واضح رہے کہ گزشتہ روز وفاقی حکومت کی جانب سے عید سے قبل پٹرول کی قیمت میں بڑا اضافہ کردیا گیا جبکہ ڈیزل کی قیمت میں کمی کی گئی تھی۔حکومت نے آئندہ 15 روز کیلئے پیٹرول کی فی لیٹر قیمت میں 9 روپے 66 پیسے اضافہ کردیا گیاتھا اور پیٹرول کی فی لیٹر نئی قیمت 289 روپے 41 پیسے مقرر کردی گئی جو کہ پہلے 279 روپے 75 پیسے تھی۔اس کے علاوہ ڈیزل کی قیمت میں بھی تبدیلی کرتے ہوئے اس کی قیمت میں 3 روپے 32 پیسے فی لیٹر کمی کی گئی ہے۔وزارت خزانہ کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق ڈیزل کی فی لیٹر قیمت میں آئندہ 15 روز کیلئے 3 روپے 22 پیسے کی کمی کی گئی اور نئی قیمت 282 روپے 24 پیسے فی لیٹر مقرر کردی گئی جو کہ پہلے 285 روپے 56 پیسے تھی۔مٹی کا تیل 2 روپے 27 پیسے فی لیٹر سستا کر دیا گیا، مٹی کے تیل کی نئی قیمت 186 روپے 39 پیسے فی لیٹر مقرر کی گئی تھی۔اس کے علاوہ لائٹ ڈیزل کی قیمت میں 38 پیسےفی لیٹرکی کمی کی گئی تھی جس کے بعد لائٹ ڈیزل کی نئی قیمت 167 روپے 80 پیسے فی لیٹر مقرر کی گئی تھی۔یاد رہے کہ اوگرا کی جانب سے نئی پیٹرولیم قیمتوں کی سمری حکومت کو بھیجی گئی تھی۔